ڈیلی میل نے مضمون میں دیگر الزامات پر معذرت نہیں کی، برطانوی صحافی

لاہور: جے ٹی این پی کے نیوز: ڈیلی میل نے مضمون میں دیگر

برطانوی اخبار ”ڈیلی میل” کے صحافی ڈیویڈ روز نے کہا کہ پاکستانی میڈیا میں ہتک عزت مقدمات سے متعلق ابہمام ہے۔

جاری کردہ معافی نامہ صرف ایک نکتے پر محیط ہے کہ نیب نے امدادی رقم چوری کرنے کا الزام اس وقت نہیں لگایا جب وہ وزیراعلیٰ تھے۔

اخبار نے مضمون میں دیگر الزامات کے لیے معذرت نہیں کی۔

مضمون میں مبینہ منی لانڈرنگ سے متعلق معذرت نہیں کی گئی۔ ڈیوڈ روز

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے انہوں نے مزید کہا مضمون میں مبینہ منی لانڈرنگ سے متعلق معذرت نہیں کی گئی۔

جسٹس نکلن کی طرف سے ان کے خلاف اخراجات کو ختم نہیں کیا گیا۔

انہوں نے قوانین کے مطابق دفاع میں جوابات نہیں دیئے، ہم اپنے دفاع میں دئیے گئے جوابات پر قائم ہیں،

شہباز شریف اور علی عمران یوسف نے دفاع میں جوابات نہیں دئیے۔

اخبار نے شہباز شریف یا علی عمران کو ہرجانے یا اخراجات کی ادائیگی نہیں کی۔

دعوے طے کرنے پر کیس ختم ہوا ہے، برطانوی صحافی

برطانوی صحافی نے مزید کہا کہ شہباز شریف اور علی عمران یوسف نے اپنے دعوے طے کر لیے ہیں۔

اسلئے کیس ختم ہو گیا ہے۔ اخبار نے مضمون کو انٹرنیٹ سے ہٹا دیا ہے۔

میں ان کارروائیوں کے اختتام پر کوئی تبصرہ نہیں کروں گا۔

خیال رہے برطانوی اخبار ” ڈیلی میل ” نے 14 جولائی 2019

کو شائع ہونے والے اپنے ایک مضمون میں ” غلطی” پر جمعرات

کو وزیراعظم شہباز شریف سے معافی مانگی تھی جس میں ان پر

پاکستان کو ڈی ایف آئی ڈی کی امداد میں غلط کام کا الزام لگایا گیا تھا۔

نیب نے شہباز شریف پر کوئی الزام نہیں لگایا، ڈیلی میل

” کیا پاکستانی سیاستدان کا خاندان جو برطانوی سمندر پار امداد کیلئے پوسٹر بوائے بن گیا ہے،

جس نے زلزلہ متاثرین کے لیے فنڈز میں خورد برد کی؟ ” کے عنوان سے ڈیلی میل کے صحافی

ڈیوڈ روز کی طرف سے مضمون تحریرکیا گیا تھا۔ اخبار نے لکھا ڈیپارٹمنٹ فار انٹرنیشنل ڈویلپمنٹ

کی گرانٹ صوبہ پنجاب کو اس وقت دی گئی تھی جب وہ پنجاب کے وزیراعلیٰ تھے۔

ہم اعتراف کرتے ہیں کہ قومی احتساب بیورو نے کبھی بھی شہباز شریف پر برطانوی

سرکاری رقم یا ڈی ایف آئی ڈی گرانٹ کے سلسلے میں کسی غلط کام کا الزام نہیں لگایا۔

ہم اس غلطی پرشہباز شریف سے معذرت کرتے ہیں۔ دریں اثناء ڈیلی میل کی معذرت کے

بعد وزیراعظم شہباز نے ٹویٹ کیا کہ غلط اور جعلی خبروں کی عمر مختصر ہوتی ہے،

اپنے موقف کی تصدیق پر اللہ کے حضور سر بسجود ہوں، تین سال تک عمران خان نے

میری کردار کشی کی ہر حد پار کی، بے بنیاد الزامات سے میرا اور میرے خاندان کا مذاق اڑایا گیا،

جیت سچائی کی ہوتی ہے۔

قارئین ===> ہماری کاوش اچھی لگے تو شیئر، اپ ڈیٹ رہنے کیلئے (== فالو == ) کریں،
مزید بہتری کیلئے اپنی قیمتی آرا سے بھی ضرور نوازیں،شکریہ
جتن نیوز اردو انتظامیہ

ڈیلی میل نے مضمون میں دیگر ، ڈیلی میل نے مضمون میں دیگر ، ڈیلی میل نے مضمون میں دیگر

= پڑھیں = پاکستان بھر سے مزید اہم اور تازہ ترین خبریں

A.R.Haider

شعبہ صحافت سے عرصہ 25 سال سے وابستہ ہیں، متعدد قومی اخبارات سے مسلک رہے ہیں، اور جرنل ٹیلی نیٹ ورک کی اردو سروس جتن نیوز اردو کی ٹیم کے بھی اہم رکن ہیں۔ جتن انتظامیہ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

%d bloggers like this: