ڈرائونے خواب دیکھنے والے ڈیمینشیا میں مبتلا ہوسکتے ہیں، تحقیق

برمنگھم (جے ٹی این پی کے) ڈرائونے خواب دیکھنے والے ڈیمینشیا میں

ایک نئی تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ جو لوگ ادھیڑ عمر میں ڈرانے خواب دیکھتے ہیں،

مستقبل میں ان کے ڈیمینشیا کے مرض میں مبتلا ہونے امکانات ہوتے ہیں۔

شائع ہونے والی برمنگھم یونیورسٹی کی اس نئی تحقیق میں بتایا گیا کہ لوگوں میں ڈیمینشیا کا عارضہ لاحق ہونے سے کئی سال یا دہائیاں قبل ان میں ڈرانے خواب مروج ہوجاتے ہیں۔

یونیورسٹی آف برمنگھم کے ڈاکٹر ابیڈیمی اوٹائیکو کا کہنا تھا کہ تحقیق میں پہلی بار یہ بات سامنے آئی ہے کہ صحت مند لوگوں میں پریشان کن یا ڈرانے خواب کا ڈیمینشیا اور سوچنے سمجھنے کے صلاحیت میں کمی کے خطرات سے تعلق ہوسکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ اس لیے اہم ہے کیوں کہ ڈیمینشیا کیحوالے سے ایسے بہت کم اشارے ہوتے ہیں جن کی مدد سے ادھیڑ عمری میں بیماری کی نشان دہی کی جاسکتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں : باقاعدگی سے قیلولہ کرنا بلند فشار خون اور فالج کا سبب بن سکتا ہے، تحقیق

ان تعلقات کی تصدیق کیلیے مزید تحقیقات کی ضرورت ہے، جبکہ محققین کا ماننا ہے کہ برے خواب

افراد میں ڈیمینشیا کی تشخیص کیلیے ایک کارآمد طریقہ ہوسکتا ہے اور بیماری کی ابتدا میں ہی

حکمت عملی کو عمل میں لایا جاسکتا ہے۔

تحقیق میں ڈاکٹر اٹائیکو نے امریکا میں تین کمیونیٹیز پر مشتمل رضاکاروں کے ڈیٹا کا جائزہ لیا۔

ان رضاکاروں میں 35 سے 64 برس کی عمر کے درمیان 600 مرد اور خواتین جبکہ 79 اور

سے زیادہ عمر کے 2600 افراد شامل تھے۔

تحقیق کے شروع میں کسی بھی شخص کو ڈیمینشیا کا مرض لاحق نہیں تھا۔ کم عمر افراد کے گروہ کا اوسطا نو سالوں تک جبکہ بوڑھے شرکا کا پانچ سالوں تک معائنہ کیا گیا۔

اس تحقیق میں 2002 سے 2012 کے درمیان ڈیٹا اکٹھا کیا گیا۔

اس دوران شرکا نے متعدد سوالنامے پر کیے جن میں ان افراد سے برے خوابوں کے متعلق سوالات پوچھے گئے۔
ڈرائونے خواب دیکھنے والے ڈیمینشیا میں

قارئین ===> ہماری کاوش اچھی لگے تو شیئر، اپ ڈیٹ رہنے کیلئے (== فالو == ) کریں،

admin

پاکستان سمیت دنیا بھر میں ہونے والے اہم حالات و واقعات اور دیگر معلومات سے آگاہی کا پلیٹ فارم

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

%d bloggers like this: