عمران خان پر حملے کا مقدمہ تاحال درج نہ ہوسکا،، ملزم کا قریبی عزیز بھی گرفتار

لاہور،وزیر آباد (جے ٹی این پی کے) عمران خان پر حملے کا مقدمہ

پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین اور سابق وزیراعظم عمران خان پر حملے کا مقدمہ تاحال درج نہیں کیا جاسکا

جبکہ قاتلانہ حملے کی تفتیش میں مز ید پیش رفت ہوئی ہے،

پولیس نے وزیرآباد سے حملہ آور ملزم نوید کے قریبی عزیز کوحراست میں لے لیا ہے،

جسکے بعد حراست میں لئے جا نیو الے ملزموں کی تعداد چار ہو گئی ہے،

جبکہ سکیورٹی اداروں نے لانگ مارچ کے ساتویں روز کے روٹ پر لگے تمام سی سی ٹی وی کیمروں کا ریکارڈ حاصل کرلیا،

گکھڑ سے اللہ والا چو ک تک 56 کیمروں کی ریکارڈنگ مانیٹر کی جارہی ہے

فوٹیج کی مدد سے ملزم کی نقل و حرکت اور اسکی مارچ میں انٹری کے مقام کے بارے معلوم کیا جارہا ہے

دیکھا جائے گا ملزم ا سلحہ ساتھ لے کر آیا یا اسے پستول پہنچایا گیا۔

ملزم اکیلا تھا یا اس کے ساتھ دیگر ساتھی بھی تھے،تفتیش کی جارہی ہے۔

پولیس ذرائع کے مطابق واقعہ میں جاں بحق معظم کی لاش کا پوسٹما ر ٹم مقد مے کے اندراج کے بغیرکیا گیا جبکہ پوسٹمارٹم سے قبل ایف آئی آر کا اندراج لازمی ہوتا ہے،

حالانکہ مقدمہ درج نہ ہونے کی وجہ سے ملزم حراست میں ہونے کے باوجود اسکی گرفتار ی بھی نہیں ڈالی جا سکی جبکہ ملزم نوید کے ویڈیو بیان نے شناخت پریڈ کا عمل بھی متاثر کیا ہے۔

ذرائع نے کہا ایف آئی آر کے اندراج میں تاخیر کے باعث جے آئی ٹی بھی نہ بن سکی،

ملزم کے پہلے دن کی ویڈیو تھانہ کنجاہ سے اور دوسری سی ٹی ڈی سے لیک ہوئی

ذرائع کے مطابق ملزم نوید کو جمعرات کی صبح سی ٹی ڈی کے حوالے کیا گیا تھا،

واقعے کا مقدمہ سی ٹی ڈی نے درج کیا تو وہ ریاست کی مدعیت میں ہو گا،

مقامی تھانے نے درج کیا تو عمران خان کے سکیورٹی چیف کی مدعیت میں درج ہوگا۔

دوسری طرف ذرائع کے مطابق حملہ آور نوید نے حملے سے قبل موٹر سائیکل حراست میں لیے جانیوالے قریبی عزیزکی دکان پر کھڑی کی تھی،

جہاں سے وہ پیدل لانگ مارچ ریلی تک پہنچا اور عمران خان کا کنٹینر دیکھتے ہی نوید نے حملہ کر دیا،

گرفتار شخص سے تفتیش کا عمل جاری ہے،

دوسری طرف عمران خان پر حملے کا مقدمہ درج کرنے میں پولیس تھانہ سٹی وزیر آباد درخواست وصول کرنے میں مسلسل لیت و لعل سے کام لینے لگا،

پی ٹی آئی قیادت نے کل دوبارہ آنے کا عندیہ دیدیا۔

پی ٹی آئی لانگ مارچ پر حملہ کے معاملہ پر مقدمہ کے اندراج کے لیے تھانہ آئی ٹیم کو 5 گھنٹے سے زائد کا وقت گزر گیا۔

تھانہ سٹی وزیرآباد میں واقعہ کا مقدمہ درج نہ ہوا

صبر کا دامن چھوٹنے پر پولیس اسٹیشن کے باہر کارکنوں نے زبردست احتجاج کیا اور امپورٹڈ حکومت کیخلاف نعرہ بازی کی۔

درخواست کے مدعی جنرل سیکرٹری پی ٹی آئی لاہور زبیر نیازی نے کہا ہم کپتان کے

نامزد کردہ ملزمان کیخلاف ہی مقدمہ درج کروائیں گے،

مقامی پی ٹی آئی رہنماؤں نے کہا ایس ایچ او عامر بھدر قانونی تقاضے پورے نہیں کر رہے ،

مقدمہ کا اندراج ہمارا قانونی حق ہے، اگر مقدمہ درج نہ کیا گیا تو دن کی روشنی میں دوبارہ

آئیں گے اور کسی صورت اپنے مطالبے سے دستبردار نہیں ہونگے۔

درخواست میں ملزم نوید احمد نامعلوم افراد، ان کے سہولت کاروں سمیت ملک کی تین بااثر

شخصیات کے نام شامل کئے گئے ہیں۔

یہی وجہ ہے پولیس نے مقدمہ کے اندراج کیلئے دی جانیوالی درخواست وصول کرنے کا حوصلہ ہی نہیں کیا۔
عمران خان پر حملے کا مقدمہ

قارئین ===> ہماری کاوش اچھی لگے تو شیئر، اپ ڈیٹ رہنے کیلئے (== فالو == ) کریں،

توشہ خانہ کیس،عمران خان نااہل قرار

admin

پاکستان سمیت دنیا بھر میں ہونے والے اہم حالات و واقعات اور دیگر معلومات سے آگاہی کا پلیٹ فارم

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

%d bloggers like this: