صحت کیلئے مصنوعی روشنی مضر، سائنسدانوں کا نئی تحقیق کے بعد انتباہ

بیجنگ (جے ٹی این پی کے) صحت کیلئے مصنوعی روشنی مضر

ایسے کمرے میں سونا جس میں رات کے وقت باہر سے مصنوعی روشنی آتی ہو ذیابیطس میں مبتلا ہونے کے خطرات میں اضافہ کر سکتا ہے۔

یہ معلومات اس قت سامنے آئیں جب چین میں ایک لاکھ افراد پر کی جانیوالی تحقیق کی گئی۔

نتائج سے پتہ چلا کہ رات میں روشنی کی آلودگی سے متاثر علاقوں میں رہنے والوں کے ذیابیطس میں مبتلا ہو نے کے امکانات ان لوگوں کی نسبت تقریبا 28 فیصد زیادہ تھے جو کم آلودہ جگہوں پر رہتے تھے۔

یہ بھی پڑھیں : باقاعدگی سے قیلولہ کرنا بلند فشار خون اور فالج کا سبب بن سکتا ہے، تحقیق

ڈائیبیٹولوجیا میں شائع ہونیوالی تحقیق میں محققین نے کہا چین میں 18 اور اس سے زیادہ عمر کے افراد میں 90 لاکھ سے زائد ذیا بیطس کے کیسز رات کے وقت روشنی کی آلودگی کی وجہ سے ہیں۔

جیسے جیسے لوگ شہروں کی جانب منتقل ہوں گے یہ تعداد مزید بڑھے گی۔

مصنفین کا کہنا تھا کہ شہری روشنی آلودگی اتنی وسیع پیمانے پر ہوتی ہے کہ

یہ دسیوں یا سیکڑوں کلیو میٹر پر موجود مضافاتی علاقوں اور جنگلاتی پارکوں کو متاثر کر سکتی ہے۔

شیکاگو کی یونیورسٹی آف فیئن برگ اسکول آف میڈیسن کے ڈاکٹر فائلس زی، جو تحقیق کا حصہ نہیں تھے،

کا کہنا تھا کہ یہ تحقیق اس سے قبل ہونے والے مطالعے میں سامنے آنے والے

رات کے وقت روشنی کے میٹابولک افعال اور ذیابیطس کے خطرات جیسے

نقصان دہ اثرات کے امکانات کی تصدیق کرتی ہے۔

صحت کیلئے مصنوعی روشنی مضر

قارئین ===> ہماری کاوش اچھی لگے تو شیئر، اپ ڈیٹ رہنے کیلئے (== فالو == ) کریں،

admin

پاکستان سمیت دنیا بھر میں ہونے والے اہم حالات و واقعات اور دیگر معلومات سے آگاہی کا پلیٹ فارم

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

%d bloggers like this: