حاجی غلام علی نے 39 ویں گورنرخیبر پختونخوا کے عہدے کا حلف اٹھا لیا

کالمز بلاگز فیچرز/ حاجی غلام علی نے 39 ویں

تقریب میں مولانا فضل الرحمان ،اراکین پارلیمنٹ اور صوبے کے اعلیٰ حکام کی شرکت

پاکستان کے شمالی مغربی سرحدی صوبہ خیبرپختونخوا کے گورنرحاجی غلام علی نے بدھ کے روز گورنر ہاؤس پشاورمیں منعقدہ تقریب میں اپنے عہدے کا حلف لے لیا ہے چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس قیصر رشید خان نے حاجی غلام علی سے بطور گورنرخیبرپختونخوا اُن کے عہدے کاحلف لیا۔ تقریب حلف برداری میں امیرجمعیت علماءاسلام (ف)مولانافضل الرحمن ، وفاقی وزیر مواصلات اسعد محمود، سینیٹر مولاناعطاءالرحمان ،سابق وزیراعلیٰ اکرم خان درانی، عوامی نیشنل پارٹی کے رہنما حاجی غلام احمدبلور، چیف سیکرٹری خیبرپختونخوا ڈاکٹر شہزاد بنگش، آئی جی پولیس معظم جاہ انصاری، میئر پشاور حاجی زبیرعلی ،اراکین پارلیمنٹ اورصوبے کے اعلی حکام نے شرکت کی۔

قبل ازیں صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی نے وزیراعظم شہباز شریف کی جانب سے جمعیت علماءاسلام (ف) کے سینیٹر حاجی غلام علی کی بطور گورنر کے پی تعیناتی کی بھیجی گئی سمری کی منظوری دی،

وزیراعظم نے سمری میں آئین کے آرٹیکل 101 کے تحت حاجی غلام علی کو گورنر خیبرپختونخوا تعینات کرنے کی سفارش کی تھی۔یاد رہے کہ سابق گورنر کے پی شاہ فرمان کے مستعفی ہونے کے بعد سپیکر کے پی اسمبلی مشتاق غنی قائم مقام گورنر کے پی کے فرائض انجام دے رہے ہیں۔

سینیٹرحاجی غلام علی ایک انتہائی ملنساراور شفیق انسان

نئے گورنر حاجی غلام علی اور بیورو چیف جتن اردو عمران رشید خان کا ایک ساتھ فوٹو جب وہ ناظم پشاور تھے (ٹویٹ دیکھیں)
سینٹر حاجی غلام علی ایک انتہائی ملنسار شخصیت اور شفیق انسان ہیں تاجر برادری میں بھی اعلی مقام حاصل ہے سخت حالات کے باوجود ہمیشہ ہر میدان میں ثابت قدم رہے،

سیاسی جماعتوں اور بزنس کمیونٹی سمیت سول سوسائٹی میں بھی جانی مانی شخصیت ہیں ، دوست تو دوست مخالفین بھی انکی خدمات حسن اخلاق کا اعتراف کرتے ہیں پشاور کے شہریوں کیساتھ انکا دوستانہ ماحول میل جول کافی مشہور ہے انکا عوام سے ملنے کا انداز بھی انفرادی حیثیت رکھتا ہے منجھے سیاستدان ہیں جن کا ملکی سیاست میں ایک اہم کردار ہے

سیاست کے 39 برس خیبرپختونخوا کے 39 گورنر بننے والے حاجی غلام علی ہیں کون اور انکی کامیابی کسی کی آشیرباد کا نتیجہ ہے یا پھر ۔۔؟

جمعیت علماء اسلام کے قائد اور نو تعینات گورنر کے پی کے حاجی غلام علی

حاجی غلام علی مولانا فضل الرحمان کے سمدھی جبکہ انکے بیٹے زبیر علی پشاور کے میئر ہیں۔

پی ڈی ایم سربراہ و جے یو آئی ف کے قائد مولانا فضل رحمان سے رشتہ ہونے کی وجہ سے

سیاسی حلقوں اور عام عوام میں یہ تاثر پھیلایا گیا ہے کہ انکی کامیابیوں کے پیچھے مولانا فضل الرحمان کا

ہاتھ ہے

بطور کے پی گورنر تعیناتی کے بعد سے سوشل میڈیا پر بھی اسی حوالے سے شور مچایا جارہا ہے تاہم جتن اردو نے اپنے قارئین خاص کر عام عوام کی آگائی کیلئے نو تعینات گورنر کے سیاسی کیریئر پر روشنی ڈالنے کی کوشش کی ہے جس سے ہر عام شہری اس بات کا آسانی سے اندازہ لگا سکے گا کہ حاجی غلام علی کی کامیابی کسی سیاسی شخصیت یا پھر انکی اپنی انتھک محنت عوامی خدمات کا صلہ ہے؟

گورنر خیبرپختونخوا حاجی غلام علی 1983 میں میونسپل کارپوریشن پشاور کے کونسلر منتخب ہوئے (ایم سی پی) 2005 سے 2015 تک صوبائی دارالحکومت پشاور کے ضلع ناظم اعلیٰ رہے اور اس دوران سرمایہ دار یا دیہاڑی دار مزدور کو ان تک رسائی آسان اور دونوں کے مسائل حل کئے ، جی روڈ سمیت دیگر سڑکوں کی کشادگی یہاں تک کہ عوامی سہولت کیلئے گورنر کی دیوار تک گرا دی جس کا ذکر آج بھی ایک تاریخی کارنامے کے طور پر کیا جاتا ہے۔ 2009 کو جے یو آئی (ف) سے سینٹر منتخب ہونے کے بعد چھ سال تک سینٹ آف پاکستان رہے

مزید اس فوٹو سلائیڈ شو میں

حاجی غلام علی کی بطور گورنر تعیناتی ، ناقدین کی تنقید / کچھ امیدیں اور تجزیہ کاروں کی رائے

خیبرپختونخوا کے نو تعینات گورنر حاجی غلام علی کے صوبے میں بطور گورنر تعینات ہونیکی خبریں تو گزشتہ

دو ماہ سے گردش کررہی تھیں جبکہ آن لائن میڈیا پر چلنے والی خبروں میں اس بات کی نہ صرف

تصدیق کردی گئی تھی بلکہ میڈیا میں رپورٹس میں اس عہدے کیلئے حاجی غلام علی کو ہی موزوں قرار دیتے

ہوئے اس توقعات کا اظہار کیا گیا کہ اگر صوبے اور وفاق کے درمیان جاری کشیدگی ختم کرنیکی کوشش کرینگے

تاکہ صوبے کے حالات بہتر ہوں دوسری طرف سیاسی اور سوشل میڈیا کے ناقدین کیجانب سے ان کی تعیناتی پر تنقیدی وار جاری ہیں

تاہم اس حوالے سے ہم جب چند سیاسی مبصرین سے بات کی تو انکا کہنا تھا کہ نو تعینات گورنر

حاجی غلام علی ایک عوامی شخصیت ہیں لیکن صوبے کی موجودہ حکمران جماعت کیساتھ حالات بہتر ہونے امکانات

کم ہیں تاہم مستقبل میں آنیوالے عام انتخابات کی ابھی سے پلاننگ شروع کی جائے گی جس میں تمام پارٹی

حاجی غلامی علی جیسے منجھے سیاست دان کے مشوروں سے مستفید ہوپائیں گے۔

خیبرپختونخوا کے 39 ویں گورنر حاجی غلام علی نے حلف برداری کی تقریب کے بعد خطاب کرتے ہوئے کہا کہ صوبے میں گورنر راج کی نوبت نہیں آئے گی، یہ لوگ ٹھیک ہوجائیں گے، ہم سیاسی لوگ ہیں ایک دوسرے کے دشمن نہیں ، وفاق اور صوبے کے درمیان بہتری کی کوشش کروں گا۔

انہوں نے مزید کہا کہ وفاق اور صوبے کے درمیان جو کھینچا تانی کو ختم کرنے کی کوشش کروں گا،

ایک گھر میں بیٹا بھی گالیاں دے تو باپ پیسے نہیں دیتا، صوبے کو اس کا حق بھی ملے گا

اور قبائلیوں کا احساس محرومی بھی دور کریں گے۔ یاد رہے کہ گورنرخیبر پختونخوا کا عہدہ شاہ فرمان کے

استعفیٰ کے بعد سے یہ عہدہ گزشتہ چھ ماہ سے خالی تھا، وفاق نے کے پی کے کا نیا گورنر

تعینات کا فیصلہ کیا، جس پر پی ڈی ایم کی جماعتوں نے جے یو آئی کے حاجی غلام علی

کے نام پر اتفاق کیا۔

ہمارے بیورو چیف خیبرپختونخوا سے رابطہ کرنیکے لیے وٹس ایپ کے بٹن کا استعمال کریں

۔۔۔ قارئین ===> ہماری کاوش اچھی لگے تو شیئر، اپ ڈیٹ رہنے کیلئے (== فالو == ) کریں، مزید بہتری کیلئے اپنی قیمتی آرا سے بھی ضرور نوازیں،شکریہ جتن نیوز اردو انتظامیہ

= پڑھیں = خیبر پختونخوا سے مزید اہم خبریں

مزید تجزیئے ، فیچرز ، کالمز ، بلاگز اور تبصرے ( == پڑھیں == )

Imran Rasheed

عمران رشید خان صوبہ خیبر پختونخوا کے سینئر صحافی اور سٹوری رائٹر/تجزیہ کار ہیں۔ کرائمز ، تحقیقاتی رپورٹنگ ، افغان امور اور سماجی مسائل پر کافی عبور رکھتے ہیں ، اس وقت جے ٹی این پی کے اردو کیساتھ بحیثیت بیورو چیف خیبر پختونخوا فرائض انجام دے رہے ہیں ۔ ادارہ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

%d bloggers like this: