۔۔۔۔ بریگزٹ ۔۔۔۔

۔۔۔۔ بریگزٹ ۔۔۔۔
پہلی وجہ ….. وہ منہ اٹھا کر ڈاکٹر انجینیر بننے چلی آ رہی تھیں۔ یعنی کہ مشرقی یورپ سے آنا کتنا آسان ہو گیا تھا۔

فیس میں بھی پچاس فیصد سے زیادہ رعایت ۔ اور پھر آتے ہی دارالحکومت میں جنسیت کا بازار گرم ہونے لگا۔

فیس بھی تو ادا کرنی تھی، کھانا پینا اور رہایش بھی۔ پیسے کہاں سے آتے؟

یوں گوری چمڑی نے آتے ہی اخلاقی کرپشن کو عروج پر پہنچا دیا۔ مساج سنٹرز میں موجیں لگ گیں۔

مشرقی یورپ کا اچانک دیا جل اٹھا تھا۔ اصلی گوری سے برداشت نہ ہوا۔ یہ کیا ہو رہا تھا۔

چٹی چمڑی کا یہ مطلب نہیں تھا کہ سوتن بن جائے۔

پڑھیں : ’’ لاڈی کور ‘‘

نایاب نسل کو اسی کے رنگ کی پیوند لگنا شروع ہو گئی تھی۔

رنگ و بو وہی بس دیس مختلف تھا لیکن یہ مداخلت زہر بنتا جا رہا تھا۔

ایک ملک کی خواتین نے تو ہلہ بول دیا۔ گلاسکو میں لہنگے والی امڈ آئی تھیں۔

بھیک دو اور بدلے میں جسم دیکھو یا ہاتھ لگاو۔

اس حرکت نے جلتی پر تیل کا کام کیا تھا کہ بس ان کو واپس بھیجو۔

دوسری وجہ ۔۔۔۔۔ وہ مشرقی یورپ کے مرد بڑے مضبوط اعضاء کے مالک تھے لیکن اتنے ہی گندے اور کام چور بھی۔

معاوضہ قوانین کے مطابق اور کام ادھورا اور ناقص۔ شکایات بڑھتی جا رہی تھیں۔

مقامی لوگوں کو چونا لگتا جا رہا تھا۔ لیبر کے نام پر لوٹ کھسوٹ کا بازار گرم تھا۔

ایک مقامی کمپنی نے دس ہزار پونڈ ادا کر کے گھاس لگوائی۔

مشرقی یورپ کے نوجوانوں نے چلتی کا نام گاڑی والا کام کیا۔

مٹی کی فلنگ نہ ہونے کے باعث گھاس نے سوکھ جانا تھا۔ کمپنی کے ملازمین نے بہت پانی دیا۔

مزید پڑھیں : ’’11 سالہ ترکونے‘‘

دن رات پانی دیتے رہے مگر ساتویں دن گھاس سوکھ کر پیلی پڑ چکی تھی۔

شکایت پر پتہ چلا کہ کمپنی مہینہ پہلے بنی تھی اور اکیسویں روز بند ہو چکی تھی۔

کسی نے سینیٹری کا کام کروایا تو ناقص جوڑوں سے کچن پانی پانی ہو گیا۔

شکایت پر پتہ چلا کہ دفتر نامعلوم مقام پر منتقل ہو چکا تھا۔ فون بند جا رہے تھے۔

تیسری وجہ ۔۔۔۔۔ کلبوں میں بھانت بھانت کی بولیاں مقامی گوروں سے برداشت نہ ہو پا رہی تھیں۔

سفید چمڑی سفید کو ہضم نہیں ہو رہی تھی۔ مشرقی یورپ والے کھل کر پینے کے عادی تھے۔

شراب کے دھندے نے۔۔۔ گوری معیشت۔۔۔۔ کو چار چاند بھی لگائے

لیکن مقامی گوروں کو یہ جل تھل پسند نہ آئی اور ان کو نکالنے کی فضا وسیع یوتی چلی گئی۔

ان مشرقی یورپ والوں کا نخرہ بہت تھا۔ مالک نے ذرا کچھ کہا تو گالی دے کر نوکری منہ پہ مار کر چلے جاتے تھے۔

چوتھی وجہ ۔۔۔۔۔ الجیرین نژاد فراسیسی شہریت کے حامل شرارتی نوجوانوں نے آتے ہی چوری کا بازار گرم کر دیا تھا۔

چھوٹی چھوٹی چوریوں نے مقامی گوروں کا جینا دوبھر کر کےرکھ دیا تھا۔

یہ جہاں جہاں گئے شکایات ہی شکایات تھیں۔ گھروں کے مالکان کا کرایہ کھا گے۔

جہاں ملازم تھے ان دکانوں کا مال کھا گے۔ مقامی گوروں سے فرانسیسیوں کی طرح نفرت بریگزٹ کا ایک بڑا سبب بنا۔

قارئین ===> ہماری کاوش اچھی لگے تو شیئر، اپ ڈیٹ رہنے کیلئے (== فالو == ) کریں،
مزید بہتری کیلئے اپنی قیمتی آرا سے بھی ضرور نوازیں،شکریہ
جتن نیوز اردو انتظامیہ

۔۔۔۔ بریگزٹ ۔۔۔۔ , ۔۔۔۔ بریگزٹ ۔۔۔۔ ,

= پڑھیں = ذرا میری بھی سنو عنوان کے تحت مزید اہم اور معلوماتی خبریں

Dr Introduction jtnpk

A.R.Haider

شعبہ صحافت سے عرصہ 25 سال سے وابستہ ہیں، متعدد قومی اخبارات سے مسلک رہے ہیں، اور جرنل ٹیلی نیٹ ورک کی اردو سروس جتن نیوز اردو کی ٹیم کے بھی اہم رکن ہیں۔ جتن انتظامیہ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

%d bloggers like this: