بابر کی سنچری،رضوان کے چھکے، پاکستان 10 وکٹوں سے فتحیاب

کراچی (جے ٹی این پی کے) بابر کی سنچری رضوان کے چھکے

پاکستان نے بابراعظم کی ٹی20 کیریئر کی شان دار دوسری سنچری اور محمد رضوان نے نصف سنچری کی بدولت انگلینڈ کے200 رنز کا ہدف بغیر کسی نقصان کے آخری اوور کی تیسری گیند میں حاصل کرکے 10 وکٹوں سے فتح حاصل کی اور 7 میچوں کی سیریز1-1 سے برابر کردی۔

سیریز کے دوسرے میچ کا ٹاس انگلینڈ کے کپتان معین علی نے جیتا اور پہلے خود بیٹنگ کا فیصلہ کیا۔
انگلینڈ کی جانب سے الیکس ہیلز اور فل سالٹ ابتدائی 5 اوورز میں 42 رنز کا آغاز فراہم کیا۔
شاہنواز دھانی چھٹا اوور کرانے آئے اور پہلی ہی گیند پر ہیلز کو بولڈ کردیا۔

شاہنواز دھانی نے نئے آنے والے بلے باز ڈیوڈ ملان کو چھٹے اوور کی دوسری گیند پربولڈ کر دیا۔

فل سالٹ اور بین ڈوکیٹ نے تیسری وکٹ کی شراکت میں 37 گیندوں پر 53 رنز بنا کر ٹیم کا اسکور 12 ویں اوورز میں 95 رنز تک پہنچایا۔

یہ بھی پڑھیں : پڑھنا لکھنا نہیں آتا، کرکٹر نہ ہوتا تو مزدور ہوتا، شاداب خان

حارث رؤف نے فل سالٹ کی وکٹیں بکھیرکر پاکستان کے لیے تیسری کامیابی دلائی۔

انگلینڈ کا اسکور 13 اوورز میں 103 رنز پر پہنچا تھا تو محمد نوازنے بین ڈوکیٹ کی وکٹیں اڑا دیں۔

معین علی اور ہیری بروکس نے تیزرفتاری کے ساتھ 27 گیندوں پر 59 رنز بنائے۔

حارث رؤف نے اننگز کے 17 ویں اوورز میں بروکس کو بولڈ کردیا۔

پاکستانی باؤلرز نے ابتدائی پانچوں بلے بازوں کو بولڈ کردیا جبکہ 18 ویں اوور کی چوتھی گیند پر خوشدل شاہ نے معین علی کا ایک آسان کیچ گرایا۔

چھٹی وکٹ پر معین علی کا ساتھ دینے کے لیے کیوران میدان پر اترے اور آؤٹ ہوئے بغیر 10 رنز بنا کر معین علی کا ساتھ دیا، دونوں کی شراکت میں 39 رنز بنے۔

معین علی نے اس شراکت کے دوران 23 گیندوں پر 4 چوکوں اور 4 چھکوں کی مدد سے 55 رنز بنائے اور ایک بڑا اسکور تشکیل دیا۔

انگلینڈ نے مقررہ 20 اوورز میں 5 وکٹوں پر 199 رنز بنالیے۔

پاکستان کی جانب سے حارث رؤف اور شاہنواز دھانی نے بالترتیب 30 اور 37 رنز دے کر 2,2 وکٹیں حاصل کیں اور ایک وکٹ محمد نواز کو ملی۔

سیریز میں اپنا پہلا میچ کھیلنے والے محمد حسنین سب سے مہنگے باؤلر ثابت ہوئے اور اپنے 4 اوورز کے کوٹے میں بغیر کسی وکٹ کے 51 رنز دیے۔

یہ بھی پڑھیں : عظمیٰ بخاری کا فخرزمان کیلئے بڑا مطالبہ، ثناء میر بھی کرکٹر کی معترف

ایک مشکل ہدف کے تعاقب میں محمد رضوان اور بابراعظم نے جارحانہ آغاز کیا اور چھٹے اوورز میں ٹیم کی نصف سنچری مکمل کی۔

اس دوران محمد رضوان کو ایک مشکل موقع ضرور ملا لیکن اگلی ہی گیند پر انہوں نے

ڈاؤسن کو چھکا رسید کیا۔

دوسرے اینڈ سے بابراعظم نے ٹی20 کرکٹ میں اپنے 8 ہزار رنز مکمل کرلیے،

جو ویسٹ انڈیز کے مشہور بلے باز کرس گیل کے بعد تیز ترین رنز ہیں۔

محمد رضوان نے 30 گیندوں پر نصف سنچری مکمل کی۔

کپتان بابراعظم نے اپنی فارم بحال کرتے ہوئے 39 گیندوں پر نصف سنچری بنائی اور پاکستان

کو بہترین پوزیشن پر لاکھڑا کیا۔

بابراعظم نے نصف سنچری مکمل ہوتے ہی مزید جارحانہ بیٹنگ کی اور ٹی20 کیریئر کی

دوسری سنچری بنادی، جس کے لیے انہوں نے 62 گیندوں کا سامنا کرکے 9 چوکے اور 5 چھکے لگائے۔

بابراعظم نے بحیثیت کپتان پاکستان کی جانب سے تمام طرز میں مجموعی طور پر سب سے

زیادہ 9 سنچریاں بنانے کا ریکارڈ بھی بناڈالا۔

پاکستان نے کپتان بابراعظم اور محمد رضوان کے آؤٹ ہوئے بغیر بالترتیب 110 اور 88 رنز کی

شان دار اننگز کی بدولت آخری اوور کی تیسری گیند پر 203 رنز بنا کر مشکل ہدف بغیر کسی

نقصان کے حاصل کرلیا۔

انگلینڈ کے باؤلرز پاکستان کے اوپنرز کے سامنے مکمل طور پر بے بس نظر آئے جبکہ پاکستان نے

اس جیت کے ساتھ ہی سیریز1-1 سے برابر کردی۔

بابر کی سنچری رضوان کے چھکے

قارئین ===> ہماری کاوش اچھی لگے تو شیئر، اپ ڈیٹ رہنے کیلئے (== فالو == ) کریں،

admin

پاکستان سمیت دنیا بھر میں ہونے والے اہم حالات و واقعات اور دیگر معلومات سے آگاہی کا پلیٹ فارم

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

%d bloggers like this: