آئندہ مرحلے میں، خودامیدواروں کا فیصلہ کرونگا، عمران خان

امیدوارون کا فیصلہ کرونگا

اسلام آباد (جے ٹی این پی کے) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ خیبرپختونخوا کے بلدیاتی انتخابات میں نالائقیوں کے سبب ہار ے، آئندہ سفارش یا رشوت ستانی برداشت نہیں ہوگی۔وزیراعظم عمران خان سے وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے ملاقات کی جس میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، علی امین گنڈاپور سمیت دیگر بھی شریک تھے۔

ملاقات میں وزیراعلیٰ نے حالیہ بلدیاتی انتخابات میں ناکامی سے متعلق رپورٹ پیش کی جس میں ناکامیوں کی وجوہات بتائی گئیں ہیں۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ کے پی الیکشن بد انتظامی کی وجہ سے ہارے، اپنی ہی پارٹی کے ارکان ایک دوسرے کے خلاف الیکشن لڑے۔ بلدیاتی الیکشن میں روایتی سیاست اور موروثی مسائل بھی شکست کی وجہ بنے جبکہ ٹکٹوں کی تقسیم بھی بلدیاتی انتخابات میں ناکامی کی وجہ قرار دی گئی ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ پارٹی امیدواروں کا بہترین چناؤ نہ ہونے سے ناکامی کا سامنا کرنا پڑا، پی ٹی آئی کے مقامی رہنماؤں نے نامزد امیدواروں سے اختلاف رکھا اوربلدیاتی الیکشن میں پارٹی منظم نظر نہیں آئی۔وزیراعظم نے بلدیاتی انتخابات میں ناکامی پر شدید برہمی کا اظہار کیا اور کہا کہ خیبرپختونخوا ہماری بیس لائن ہے، یہاں اندرونی نالائقیوں کے سبب ہم ہار گئے۔انہوں نے کہا کہ آئندہ الیکشن میں کسی قسم کی سفارش یا رشوت ستانی برداشت نہیں ہوگی۔

وزیراعظم نے کے پی میں بلدیاتی الیکشن کے آئندہ مرحلے میں خود امیدواروں کے چناؤ کا فیصلہ کرلیا اور وزیراعلیٰ کو پی ٹی آئی کارکنوں کو منظم کرنے کی ہدایت کی۔وزیراعظم کا کہنا تھاکہ ہمیں پہلے مرحلے کے نتائج سے سبق سیکھنا ہو گا، پارٹی کے اندرونی اختلافات کا فائدہ مخالفین کو ہوا۔۔ عمران خان نے کہا کہ براہ راست منتخب تحصیل ناظم گورننس کو بہتر بنائیں گے،

ایسے نظام سے مستقبل کے لیڈرز تیار ہوں گے۔ سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ٹو ئٹر پر اپنے بیان میں وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ خیبرپختونخوا بلدیاتی الیکشن پر شور شرابہ کیا جا رہا ہے، کسی کو احساس نہیں کہ یہ انتخابات جدید اور تبدیل شدہ نظام کی شروعات ہیں، ایسا نظام کامیاب جمہوریت میں ہوتا ہے، 74 سالہ تاریخ میں پہلی بار ہمارے پاس با اختیار بلدیاتی نظام ہے۔

دریں اثنا خیبرپختونخوا میں تحریک انصاف کی حکومت ہونے کے باوجود بلدیاتی الیکشن میں بدترین کارکردگی کے بعد پی ٹی آئی کی شکست کے ذمہ داروں کے نام سامنے آ گئے۔ 19 دسمبر کو خیبرپختونخوا میں ہونے والے بلدیاتی الیکشن میں پشاور، مردان، صوابی، بنوں، ڈی آئی خان و دیگر اضلاع میں ہارنے کی رپورٹ وزیراعظم عمران خان کو پیش کی گئی، تحریک انصاف کی شکست میں اضلاع کی سطح پر ذمہ داروں کا تعین کر دیا گیا،

تحصیل مئیر پشاو کا ٹکٹ گورنر شاہ فرمان ، کامران بنگش اور تیمور سلیم جھگڑا کی سفارش پر دیا گیا۔رپورٹ کے مطابق مئیر کے ٹکٹ پر سفارش پر ارباب شہزاد خاندان کی مخالفت پر شکست کا سامنا کرنا پڑا، مردان کے تمام ٹکٹ عاطف خان خان کی سفارش پر دئیے گئے تھے،

صوابی میں تمام ٹکٹ سپیکر اسد قیصر اور صوبائی وزیر شہرام ترکئی کی سفارش پر دیئے گئے۔ ناقص کارکردگی پر گورنر، سپیکر اسد قیصر سمیت 4 صوبائی وزراء اور 11 اراکین اسمبلی شکست کے ذمہ دار قرار پائے۔متھرا میں نور عالم اور ایم پی اے ارباب وسیم شکست کا ذمہ دار قرار پائے۔

تحصیل بڈھ بیر میں گورنر شاہ فرمان اورایم این اے ناصر موسیٰ زئی کے درمیان اختلافات پر شکست کا سامناکرنا پڑا۔ذ رپورٹ میں بلدیاتی الیکشن کے دوران مخالف امیدوار کی حمایت کرنے پر چارج شیٹ تیار کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے،

اراکین اسمبلی کو شوکاز نوٹس دیئے جائینگے، پارٹی پالیسی کیخلاف جانے والیایم پی ایزاورایم این ایزکیخلاف کاروائی کا بھی فیصلہ کیا گیا ہے پارٹی کی جانب سے ایم این ایز،ایم پی ایزکوشوکازکے علاوہ مزید کوئی کاروائی نہیں کی جاسکتی۔

امیدوارون کا فیصلہ کرونگا

ویسٹ انڈیزدوسرا ٹی 20بھی ہار گیا، پاکستان نے سیریز جیت لی

=-= قارئین= کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

%d bloggers like this: